موٹر وے زیادتی کیس پر انسداد دھشت گردی کی عدالت کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہیں

sample-ad

.جام پور ( وقائع نگار ) آواز فاؤنڈیشن پاکستان اور پارٹنر تنظیم نیلاب چلڈرن اینڈ وومن ڈویلپمنٹ کونسل راجن پور جو کہ ڈسٹرکٹ راجن پور میں عوامی شعوری مہم کے تحت باھمی اشتراک کے ساتھ کام کر رہے ہیں کے ممبران و عہدیداران نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ موٹر وے زیادتی کیس پر انسداد دھشت گردی کی عدالت کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہیں عدالت کے 20 مارچ کے فیصلے کیمطابق زیادتی کے مرتکب دونوں مجرموں کو موت کی سزا کیساتھ ساتھ 14 سال قید اور ڈکیتی کے الزامات کے تحت دو ,دو لاکھ روپے جرمانے کی سزا بھی سنائ گئ ہے, آواز فاؤنڈیشن پاکستان,اور نیلاب حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ صوبائ سطح پہ قانون سازی کروائے تاکہ خواتین اور بچوں کیساتھ ہونیوالے ایسے جرائم کو جڑ سے ختم کیا جا سکے, انہوں نے کہا کہ ہم امید کرتے ہیں کہ ایسے فیصلوں سے ملک میں اس قسم کے جرائم میں کمی آئیگی ,اور خواتین اور بچوں کے لئے مکمل تحفظ کا ماحول پیدا ہوگا, یاد رہے کہ “گلوبل جینڈر گیپ انڈیکس 2020″کے مطابق پاکستان خواتین کے لیے دنیا کا چھٹا ملک ہے اس لیے ہم امید کرتے ہیں کہ موجودہ حکومت ان حقائق کو مدنظر رکھتے ہوئے ایسے اقدامات کریگی جس سے ملک کو خواتین کے لیے رہنے کے قابل بنایا جائیگا. انہوں نے اپنے بیان میں یہ بھی کہا ھے کہ آواز فاؤنڈیشن پاکستان اور نیلاب راجن پور نے ہمیشہ خواتین اور بچوں کے حقوق کی آواز بلند کی ہے ہم 1995 سے لوگوں خاص طور پہ محروم طبقات سے تعلق رکھنے خواتین. بچوں اور نوجوانوں کو انکی زندگی کے بنیادی حقوق دلانے کے لیے کام کر رہے ہیں , آواز فاؤنڈیشن پاکستان, اجالا نیٹ ورک اور اسکے تحت اپنے 48 پارٹنرز تنظیموں کی نمائیندگی کرتے ہوئے ایک بار پھر حکومت سے استدعا کرتے ہیں کہ صوبائ سطح پہ قانون کرا کہ اس پہ عملدرامد کو یقینی بنا کہ خواتین اور بچوں کے خلاف ایسے ظالمانہ جرائم کو روکا جائے, اور ہم اجالا نیٹ ورک کی حیثیت سے لوگوں میں آگہی اور شعوری بیداری مہم کیساتھ ساتھ حکومت تک ا ن کی آواز پہنچانے اور ان کے حقوق دلوانے کا کام جاری رکھیں گے .